بی ایس (بین الاقوامی تعلقات)

COURSE OUTLINE

:دورانیہ
۴ سال

بین الاقوامی تعلقات کا شعبہ کیا ہے؟

بین الاقوامی تعلقات ایک وسیع موضوع ہے جو صرف اقوام کے مابین سیاسی امور سے متعلق ہے بلکہ یہ مختلف اقوام کے اقتصادی اور معاشرتی معاملات سے آگہی کانام بھی ہے۔ یہ ان تمام شعبوں کو احاطہ کرتا ہے جو دنیا کے بارے میں وسیع ترفہم پھیلاتے ہیں۔ یہ ماضی کے مواقع باہم مربوط کرتا ہے اور گویا ”شورش امروز وعدہ فردا“ دیکھنے کا سلیقہ دیتا ہے۔ ایک علمی ڈسپلن کے طور پر بین الاقوامی تعلقات تاریخ، ماحولیاتی مطالعہ اور بہت سی دیگر تخصیصی صورتوں کا احاطہ کرتا ہے۔ ایک شخص خواہ وہ بین الاقوامی تعلقات کے حوالے سے کام کر رہا ہو یا پھر ان کا مطالعہ کررہا ہو اس سے توقع کی جاتی ہے کہ وہ معیشت، تاریخ، سماجیات، بشریات، قوانین، قومیت پسندی، ترقیانی حقوق، نفسیات، جغرافیہ، امور عالم اور دحتیٰ کہ فلسفے جیسی چیزوں کاتجزیہ کرے

جناح یونیورسٹی برائے خواتین میں بین الاقوامی تعلقات کا شعبہ

جناح یونیورسٹی برائے خواتین میں بین الاقوامی تعلقات کا شعبہ تعلیم کیلیے تدریس کا روایتی طریقہ یا نمونہ استعمال نہیں کرتا۔ یہاں آپ کوریفرنس لائبریری سے استفادہ کرنے کا موقع ملتا ہے۔ ہماری لائبریری سوشل سائنسز کے ماہانہ جرائد سے مزید ہے۔ یہاں تازہ ترین امور پر کتابیں دستیاب ہیں۔

طالبات کے علم میں اضافے کیلیے طالبات کوہفتہ وار”گریجوایٹاسٹوڈنٹس ڈسکشن گروپ ہوتے ہیں۔ اس کے علاوہ ہم کراچی کی نمایاں یونیورسٹیوں میں طالبات کو وزٹ کیلیے بھیجتے ہیں۔شعبے میں مختلف سیمینار ہوتے ہیں جن میں میڈیا سے متعلق معروف شخصیات کو مدعو کیاجاتا ہے۔ شعبے کا بنیادہ فوکس اس امر پر ہے کہ طلابات کو اس طور سے صیقل کیاجاتا کہ وہ تمام یونیورسٹیوں کے طلبہ سے نہ صرف مسابقت کر سکیں بلکہ معاشرے میں مفید کردار بھی ادا کرسکیں

کیریئر

دنیا بھر میں بسے ادارے لوگوں کو تربیت آفر کرتے ہیں جو کسی شعبے میں تخصیص حاصل کر رہے ہوتے ہیں۔ ایسی طالبات کو بیرون مطالعاتی معاہدے مل سکتے ہیں انہیں الیکٹرانک، پرنٹ میڈیا، دفاع، معیشت، این جی اوز، سفارتکاری، مایکٹنگ، س، ماحولیاتی اداروں، فارن پالیسی اور تھنک ٹینکس میں کام کرنے کے مواقع مل سکتے ہیں

رابطے کی معلومات

۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

تازہ ترین خبریں